‘جھارکھنڈ میں بنے گی کانگریس حکومت، گزشتہ 5 سالوں میں بی جے پی حکومت ہر محاذ پر ناکام’

جھارکھنڈ کانگریس کے ایگزیکٹو چیئرمین سنجے پاسوان نے دعوی کیا کہ ریاست میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں کانگریس-جھارکھنڈ مکتی مورچہ-آر جے ڈی ‘مهاگٹھبدھن’ کی ہی جیت ہوگی، کیونکہ لوگوں نے دیکھ لیا ہے کہ گزشتہ پانچ سالوں میں بی جے پی حکومت ہر محاذ پر ناکام رہی ہے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ ایک قومی پارٹی ہوتے ہوئے کانگریس جھارکھنڈ مکتی مورچہ (جے ایم ایم) جیسی علاقائی پارٹی سے بھی کم سیٹوں پر انتخاب کیوں لڑ رہی ہے، تو سنجے پاسوان نے کہا، ”کانگریس کا ہمیشہ سے اتحاد نبھانے پر یقین رہا ہے، جہاں جس کی پوزیشن مضبوط ہے، وہاں وہی پارٹی لڑ رہی ہے، کیونکہ ہمارے ایک جیسے خیالات ہیں”ـ

جھارکھنڈ کی 81 رکنی اسمبلی کے لئے ہونے جا رہے انتخابات میں جے ایم ایم 43 سیٹوں پر، کانگریس 31 اور راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) 7 سیٹوں پر انتخاب لڑ رہی ہے، جس طرح مہاراشٹر میں شیوسینا بی جے پی اتحاد ٹوٹا ہے، ٹھیک اسی طرح عین انتخابات کے وقت جھارکھنڈ میں طویل عرصے سے بی جے پی کی پارٹنر رہی آل جھارکھنڈ اسٹوڈنٹس یونین (اجسو) نے اکیلے الیکشن لڑنے کا فیصلہ لیا ہے، پارٹی نے 19 سیٹوں پر اپنے امیدوار کھڑے کیے ہیں۔

کانگریس رہنما سنجے پاسوان نے کہا کہ اجسو نے این ڈی اے سے اپنا ناطہ توڑ لیا ہے، پھر بھی مهاگٹھبدھن آل جھارکھنڈ اسٹوڈنٹس یونین (اجسو) کو نہ حمایت دے گا اور نہ ہی اس سے لے گا۔

غور طلب ہے کہ جھارکھنڈ کی 81 اسمبلی سیٹوں پر 30 نومبر سے پانچ مراحل میں انتخابات ہونے والے ہیں، مہاراشٹر میں اتحادی شیوسینا کے رویہ کی وجہ سے حکومت بنانے کا موقع کھو چکی بی جے پی کے سامنے اپنے ساتھیوں سے مسلسل کسی نہ کسی مسئلہ پر تناؤ بنا رہتا ہے، یہاں بھی بی جے پی کو اپنے سب سے پرانے ساتھیوں میں سے ایک جنتا دل-یونائیٹڈ (جے ڈی یو) سے بھی مقابلہ کرنا ہوگا، جے ڈی یو نے بھی ریاست کی تمام سیٹوں پر اکیلے انتخابات لڑنے کا فیصلہ کیا ہے، اس کے علاوہ اتحادی پارٹی آل جھارکھنڈ اسٹوڈنٹس یونین (اجسو) اور لوک جن شکتی پارٹی (ایل جے پی) بھی ریاست میں بی جے پی کو آنکھیں دکھا دی ہیں، بی جے پی کی اتحادی پارٹی آل جھارکھنڈ اسٹوڈنٹس یونین (اجسو) نے تو 12 اسمبلی سیٹوں پر اپنے امیدواروں کے نام کا بھی اعلان کر دیا ہے، وہیں ایل جے پی صدر چراغ پاسوان نے بھی 50 سیٹوں پر اکیلے انتخابات لڑنے کا اعلان کر دیا ہے۔

TheLogicalNews

Disclaimer: This story is auto-aggregated by a computer program and has not been created or edited by TheLogicalNews. Publisher: Qaumiawaz urdu

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *