قومی سلامتی کو درکنار کر الیکٹورل بانڈ کو دی گئی ہری جھنڈی، کانگریس نے مودی حکومت پر اٹھائے سوال

الیکٹورل بانڈ کو لے کر ایک بڑا انکشاف ہوا ہے۔ نیوز ویب سائٹ نیوز لانڈری نے دعویٰ کیا ہے کہ سال 2017 کے بجٹ سے ٹھیک پہلے خود ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) نے الیکٹورل بانڈ کی مخالفت کی تھی۔ لیکن مودی حکومت نے آر بی آئی کے اعتراضات کو درکنار کرتے ہوئے الیکٹورل بانڈ کا اعلان کر دیا۔

اس رپورٹ کے آنے کے بعد سے الیکٹورل بانڈ اور مودی حکومت پر کئی سوال اٹھنے لگے ہیں۔ کانگریس نے مرکز کی بی جے پی حکومت پر حملہ بولا ہے۔ پارٹی کے ترجمان رندیپ سرجے والا نے دعویٰ کیا کہ الیکٹورل بانڈ سے گمنام چندے اور دولت جمع کرنے میں اضافہ ہوگا۔

مودی حکومت پر نشانہ سادھتے ہوئے کانگریس کے قومی ترجمان رندیپ سرجے والا نے سوال کیا کہ برسراقتدار پارٹی کو بتانا چاہیے کہ الیکٹورل بانڈ کے ذریعہ سے اسے کتنے ہزار کروڑ روپے کا چندہ ملا۔ انھوں نے ٹوئٹ کیا کہ ”آر بی آئی نے الیکٹورل بانڈ کی مخالفت کی جس سے گمنام چندہ اور دولت جمع کرنے میں اضافہ ہوگا۔ اب مودی حکومت بتائے کہ کتنے ہزار کروڑ کے الیکٹورل بانڈ جاری ہوئے۔”

سرجے والا نے سوال کیا کہ ”بی جے پی کو کتنے ہزار کروڑ ملے؟ کیا یہ ایک ہاتھ لے اور دوسرے ہاتھ دے والی بات ہے؟ کیا یہ ہے ہزاروں کروڑ کی بی جے پی کا منتر؟” انھوں نے جس میڈیا رپورٹ کا حوالہ دیا اس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ الیکٹورل بانڈ کے انتظام کا آفیشیل اعلان سے پہلے ریزرو بینک نے اس قدم کی مخالفت کی تھی۔

دوسری طرف کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے بھی الیکٹورل بانڈ کو لے کر مودی حکومت کے منشے پر سوال اٹھائے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ قومی سلامتی کو درکنار کر کے الیکٹورل بانڈ کو ہری جھنڈی دی گئی تھی۔ پرینکا گاندھی نے ٹوئٹ کر کہا کہ ایسا اس لیے کیا گیا تاکہ بی جے پی کالا دھن بٹور سکے۔ پرینکا گاندھی نے یہ بھی لکھا کہ کالے دھن کو ختم کرنے کے وعدے کے ساتھ بی جے پی اقتدار میں آئی تھی، لیکن وہ خود اس سے جڑی رہی۔

TheLogicalNews

Disclaimer: This story is auto-aggregated by a computer program and has not been created or edited by TheLogicalNews. Publisher: Qaumiawaz urdu

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *